»
سه شنبه 2 آبان 1396

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس کے 64ویں اجلاس میں مسلمان قائدین میں سے جنہوں نے ابھی تک تقریریں کی ہیں اور انصافا ہر ایک قائد نے مھم اور حقیقت پر مبنی عناوین کا تذکرہ ضرور کیا جسے پورے دنیا کا میڈیا بلافاصلہ منعکس کررہا ہے۔ ان میں سے لیڈرانہ بیان سے بالاتر جس قائد کا بیان تبصرہ نہیں بلکہ ظالموں پر محاصرہ تھا۔ ظالموں کا تذکرہ کے ساتھ مظلوموں کا مرثیہ تھا ، عنوان نہیں بلکہ مظلومیت کا طوفان تھا ۔ مسلمان کے کرداری خد و خال کا عکس تھا ، وہ کردار اور رفتار کا غازی اور عالم اسلام کا قابل فخر سیاست داں جناب ڈاکٹر محمود احمدی نژاد (حفظ اللہ) تھے جنہوں نے چھے نقاط بر مبنی اپنی تقریر میں خداپرست اور خدا ترس مسلمانوں کا سر اونچا کیا ، لیکن افسوس کہ پرنٹ میڈیا کے اکثر اخبارات نے ان باتوں کو مھم نہیں سمجھا جنہیں صدر جمھور صاحب نے اپنے بیان کے پہلے نقطے میں مخصوص طور پر بیان کیا جس سے نہ صرف مسلمانوں بلکہ ھر انصاف پسند انسان کو اپنے انسان ہونے پر ناز ہوتا ہے۔

رمضان المبارک کے بارے میں خدای سبحان اور پیغمبر اسلام (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ) کے ارشادات و فرمایشات  پرمبنی، بانی اسلامیہ جمھوریہ ایران نے جس آواز کو اللہ اور اسکے رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے نسبت امید فرج کے ساتھ کمال مظلومیت میں بلند کیا تھا اور آج آنحضرت کے طفیل ایک عالمی اسلامی تحریک میں تبدیل ہو چکی ہے۔

آٹھ ربیع الاول امام حسن عسکری علیہ السلام کی شہادت کے مناسبت سے عرض تسلیت اور آغاز امامت ختم ولایت کے مناسبت سے تبریک و تہنیت عرض ہے ۔

حضرت سید الشہداءامام حسین علیہ السلام کی بیٹی حضرت سکینہ کا وفات پانچ ربیع الاول کو مشہور ہے

مسرتوں کا مہینہ ربیع الاول کے آمد پر قارئین کی خدمت میں تبریک و تہنیت عرض ہے ۔

اطلاعات گردوپیش مورخہ جمعۃ المبارک 12 فروری 2009 میں ایران امریکہ تعلقات میں بہتری کے مزید اشارے کے زیر عنوان خبر میں ولی فقیہ حضرت آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای روحی و جسمی لہ الفداء کےنام گرامی کے ساتھ غیر منتخب سپریم رہنما استعمال کیا ہوا تھا ،

1 2 3 4 5 6 7 8 
قدرت گرفته از سایت ساز سحر