»

مطالب ویژه

نیوزنور:یہ غلط ہے کہ کچھ لوگ ہاتھوں میں قمہ لے کے سروں پر دے ماریں ، اپنے آپ کو لہو لہان کریں ۔ ایسا کرنے سے کیا ہوگا !یہ کیسی عزاداری ہے؟ جبکہ سر اور صورت پیٹنا ایک قسم کی عزاداری ہے ۔ آپ نے کئ بار خود مشاہدہ کیا ہوگا کہ جب کسی کو مصیبت پیش آتی ہے وہ سر اور صورت پیٹتا ہے ۔ یہ معمول کی عزاداری ہے ۔ مگر آپ نے کہاں دیکھا کہ کوئی اپنے عزیز ترین عزیز کیلئے تلوار کو ہاتھ میں لے کر اپنے دماغ اور سر پر مارتا ہے خون بہاتا ہے !کہاں ایسا کرنا عزاداری ہے ! روایتی قمہ زنی نقلی ہے ۔ یہ ان کاموں میں سے ہے جنکا دین سے کوئی تعلق نہیں ہے اور اس میں کوئی شک نہیں خدا بھی اس کام سے راضی نہیں ہے ۔


برصغیر کے متعدد چھوٹے بڑے شہروں میں عید سعید غدیر انتہائی مذہبی جوش و خروش اور تزک و احتشام کے ساتھ منائی گئی۔ ان روح پرور اجتماعات میں شیعہ سنی عوام نے شرکت کر کے
برصغیر میں عید سعید غدیر کی مناسبت سے روح پرور اجتماعات :

لیلۃ القدر خیر من الف شھر>> کہہ کے اشارہ کیا ہوا ہے کہ قدر کی رات ھزار مھینوں سے افضل ہے۔       

 زید بن ارقم کہتے ہیں کہ : حضرت ابوبکر، حضرت عمر ، حضرت عثمان ، طلحہ اور زبیر مہاجرین میں سے وہ افراد تھے جنہوں نے سب سے پہلے حضرت علی علیہ السلام کے ہاتھ پر بیعت کی اور مبارکباد پیش کی ۔ بیعت اور مبارکبادی کا یہ سلسلہ مغرب تک چلتا رہا ۔ غدیر خم کے واقعے کو ایک سو دس اصحاب رسول نے نقل کیا ہے ۔صاحب کتاب الغدیر کے مولف کے مطابق علمای اہل سنت کے معتبر کتابوں میں حدیث غدیر کو ایک سو دس راویوں نے بیان کیا ہے ۔ دوسری صدی میں جس کو تابعین کا دور کہا گیا ہے ان میں سے اناسی افراد نے اس حدیث کو نقل کیا ہے ۔ بعد کی صدیوں میں بھی اہل سنت کے تین سو ساٹھ علماءنے اس حدیث کو اپنی کتابوں میں بیان کیاہے اور علماءکی ایک بڑی تعداد نے اس حدیث کی سند کوصحیح تسلیم کیا ہے ۔ اس گروہ نے نہ صرف یہ کہ اس حدیث کو بیاں کیا بلکہ اس حدیث کی سند اور افادیت کے بارے میں مستقل طور کتابیں بھی لکھی ہیں۔

  ماہ مبارک رمضان کا آخری جمعہ  جو کہ "عالمی روز قدس" کے نام سے موسوم ہوا ہے عالم اسلام کے اتحاد کی علامت بن کر  عالمی اسلامی تحریک بن چکی ہے اور اب وہ دن دور نہیں جب امت اسلامی اسرائیل کی نابودی اور فلسطین کی فتح سے اعیاد اسلامی میں ایک اورعید کا  اضافہ ہو جائے گالیکن رواں سال کے ماہ مبارک مضان کے خون چکان غزہ  کی حالت زارنے ثابت کردیا کہ قدس کما کان مظلوم ہے اور  صرف مخلص مسلمان عوام اور جمہوری اسلامی ایران کا دل دھڑکتا اور فلسطینی عوام کی ڈھارس باندھنے میں مصروف عمل ہیں۔

شب قدر کو شب امامت اور ولایت بھی کہا جاتا ہے کیونکہ خود قرآن کہتا ہےکہ اس رات میں فرشتے ، ملائکہ اور ملائکہ سے اعظم ملک روح بھی نازل ہوتے ہیں۔ اس نقطے کو سمجھنا ضروری ہے کہ نازل ہوتے ہیں {تنزل الملائکہ}، نازل ہوئے نہیں، بلکہ نازل ہوتے ہیں اور یہ نقطہ انتہائي غور طلب ہے۔
نیوزنور:انیس رمضان المبارک  سن 40 ہجری قمری کو حضرت علی علیہ سلام پر مسجد کوفہ میں قاتلانہ حملہ۔
بارہ رمضان حضرت داوود علیہ السلام پر زبور نازل ہوئی ہے ۔
سن 1 ھ ق : پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ کی طرف سے مسلمانوں کےدرمیان عقد اخوت آغاز ہوا ۔

خدا نے قرآن مجید میں سورہ تحریم کی آیت گیارہ میں مومنین کیلئے ایک خاتون کو شاھد مثال اور نمونہ عمل کے طور پر پیش کیا ہے جس کا شوھر فرعون ہے اور خدا ہونے کا دعویدار ہے لیکن خدا اپنے سب بڑے منکر کی شریک حیات کو مومنوں کیلئے مثال قرار دیکر چراغ راہ کے طور پر بیان کرتا ہے کہ خدا پر ایمان رکھنے والوں کیلئے حضرت آسیہ میں نمونہ عمل ہے۔ اور یہ خاتون صرف خواتین کیلئے نمونہ عمل نہیں ہے بلکہ ہر اہل ایمان کیلئے جن میں تمام مومن خواتین و حضرات شامل ہیں۔

1 2 3 4 
این سایت متعلق است به 
قدرت گرفته از سایت ساز سحر