»
سه شنبه 2 آبان 1396

صدر پاکستان کی خوشخبری عظیم خوشخبری

صدر زرداری کا اعتراف کہ کشمیرمیں عسکریت پسندی دہشتگردی ہے ایک تلخ حقیقت03

 

بسمہ تعالی

جب سے اقوام متحدہ نے کشمیر کی تاریخ کو بھلا کر کشمیری عوام کے سیاسی مستقبل کو ہندوستان اور پاکستان کے ساتھ محدود کرکے ان دو صفوں کا حکم بن کر آدھے ادھر جاو آدھے ادھر جاو اور باقی میرے پیچھے آو کہہ کر کشمیر کو سیاسی مذاق بنا چھوڑا اور حق خود  ارادیت کے عنوان کے ساتھ  خواب خرگوش کشمیری اذہان پر حاکم کیا گیا  تب سے  الحمدﷲ آج لگتا ہے کہ صدر پاکستان نے اس با ت کا اندازہ لگایا کہ جس کام سے کشمیری عوام کیلئے انکی آزادی کی منزل دور ہو جاتی ہے وہ دھشت گردی ہے اگر چہ اس طریقہ کار سے جان و مال نچھاور کیوں نہ کرنا پڑا ہو ۔اسطرح پاکستان نے اپنا سیاسی جذبہ بھلا کر انسانی اصولوں کی پاسداری کا نعرہ دیا ہے اگر ہندوستان  بھی سیاسی جذبے کو بھلا کر  انسانی جذبہ بروکار  لایے خطے میں امن و امان کی سنگ میل پڑ سکتی ہے ۔

اسوقت چونکہ پاکستان اور ہندوستان ایک واضح موقف پر کھڑے نظر آتے ہیں وہ یہ کہ  ھندوستان بھی عسکری اور ملٹری آپشن کو  دھشت گردی کے عنوان سے یاد کرتا ہے اورپاکستان بھی خون جگر پی کر عسکری اور ملٹری آپشن کو دھشت گردی کہنے لگا ہے اور الحمدﷲ  دونوں تحریک آزادی کشمیر کو  الگا وادی اور  علحدگی پسند تحریک کے عنوان سے تسلیم کرتے ہیں۔ یعنی دونوں تحریک آزادی کو مانتے ہیں تو انصاف کا تقاضا یہ ہے کہ دونوں ملک اس پر عمل کرکے دکھائیں اور  کشمیر کو اپنی قدیم تاریخی حیثیت سے ایک آزاد خود مختار ملک کے طور پر قبول کریں ۔

آغا سید عبدالحسین بڈگامی

‏جمعه‏، 10‏ اکتوبر‏، 2008


آپ کی رائے
نام:  
ایمیل:
عبارت:  500
قدرت گرفته از سایت ساز سحر