کاشر
شماره : 47094
: //
قاسم بن حسن علیہما السلام سند کربلاہ پیٹھہ پیغام

جناب قاسم دپان:" أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ"یہ چھوء ماچھہ کھوتہ تہء میوٹھ باسان ۔ یہ کتھ کیازء چھنہ ائس وژھہ ناوان ۔یہ کیازء چھنہ دپان میہ چھوء خاندر ٹوٹھ۔میہ چھئي مئز لاگن ٹاٹھی ۔ میہ چھوء سہرء گنڈن ٹوٹھ۔بلکہ دپان چھوء میانہ خاطرء چھوء موت "أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ"کیازہ ،پانے یمہ ساعتہ میدان کربلا آکھ ژء وونتھ نا"اَلا تَرَوْنَ اِلَي الْحَقِّ لا يُعْمَلُ بِهِ "توہی چھوو نا وچھا ن حقس چھنہ عملی گژھان کنیہ ۔بہء وچھا بہء آسہ زندءمیہ برونہہ کنہ آسہ میون امام زمان حقچ ترجمانی کران بہء روز زندء تہء بہ ء وچھن سوء مارء گژھان ، امہ کھوتہ چھوء بہتر  أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ" ۔مگر خداین وون نا اکھ جماعت چھئي امر بالمعروف خاطرء ، نہی عن منکر خاطرء ، یمے چھئی رستہ گار ،بہء یژھہ امر بالمعروف کرن وول آسن، بہ گژھہ منکرس خلاف اکھ شاہد روزن کہ میہ کور پننہ پان رتہ چھپہء پننہ نس امامس یمی زن حقچ آواز زندء تھاوی ۔یمی ز ن رسول رحمت سند دین مسخ گژھہ نشہ بچووی۔

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

قاسم بن حسن علیہما السلام سند کربلاہ پیٹھہ پیغام

عبدالحسین سنز ستیمء محرم 1435 مطابق 10نومبر 2013 زڈبل سرينگرء پرمژ مجلس

 

"النّاس عَبيدُ الدُّنْيا وَ الدِّينُ لَعْقٌ عَلى اَلْسِنَتِهِمْ،  يَحوطونَهُ ما دَرَّتْمَعائِشُهُمْ فَاِذا مُحِّصوا بِالْبَلاءِ قَلَّ الدَّيّانونَ"

یمی دیندار چھئي یہند تعداد چھوء واریاہ کم،وین یلہ یمن دیندارن تہء چھئي کہوٹ لگان  اتہ تہء چھوء کم گژھان۔

"قَلَّ الدَّيّانونَ"اتہء چھئي مختصر [تعداد روزان]۔

عالمس منز وچھوویا پننہ گھرء پیٹھے کرو شروع ،پتہ کرو محلہء پیٹھے شروع،پتہ گام و شہر وغیرہ ، ہر جایہ  منز چھوء اسہء یہوے معیار قائم گژھان ۔

گژھہ ناہ ، کیازہ کہ یمہ ساعتہ اسہ معیار بدلائی ۔ میہ چھوء گَسُن مثلا بڈگوم بہء کھسہ ہاے ویے یس اوڈی [گاڑء] بہ واتہ اوڈی ، بہء ونہ میے اوس بڈگوم واتن بہء کیازء ووتس نہ؟ ۔

اہنوو وتھ ہے ژء غلط اختیار کرتھ ژء کپاری واتک بڈگوم۔

یوتان نہ ائس پنن واضح موقف معین کرو ائس ہیکو نہ ھدفس حاصل کرتھ کینہ ۔

امسی امام زمان سندس مظلومس جناب قاسم مس کوتاہ چھوء ائس ظلم کران !جناب قاسم من دیوت اسہ امامت تک سبق ۔ اسہ دوپوس امامت چھوء دینداری ہند سبق اسہ ون  اسہ کیاہ لگہء۔سانس معاشرس منز چلہ نہء امامت امامت [کینہ]تھاو طاقچس پیٹھ۔ژء[جناب قاسمء] او سووئي خاندر کرن ، ژء آئسی مہرن ضرورت ،ژء اوسکھ امام حسینس پتہ پتہ پکان ژء ژلک تمس کور ہیتھ ۔ ژء ون اسہ یہ دلیل۔امامت مہ ون۔کیازء کہ امامت ساتھی چھوء میہ پانس کردار شیرن ،ہمہ ساتھی چھنہ ، جایز پاٹھی یا ناجایژ پاٹھی۔یہ کوس معیار چھئي ائس پننہ جایہ قرار دوان ، یوس زن روح چھوء  امام حسین علیہ السلام اسہ دوان  قرآن، کہ توہی رودیو سوء جماعت یتین وچھووی غلطی گژھان چھئی تتھ کریوو روک تھام۔مگر ائس چھنہ تہ بنان کہین۔

جناب قاسم سنز یہ معصومیت یتھ زن تاریخن بعضی میدان کربلاہس منز شہید گژھنہ ساتھی مغالطہ چھوء گومت کہ تیوتاہ اوس کمسن کینژھو چھوء 9 ووہر لیوکھمت ، کینژھو 11 ووہر ، کینژھو 14 تہ کینژھو 15 ۔ یمہ سندء معصومیتک حال یہ اووس کہ خیمس منز دراو نہ "زرہ" ہی تمسندء سایزچ۔لذا تمی ہیچ نہ زرہ ہی کانہہ لاگت۔سوء چھوء واحد مجاہد یوس زن صرف کرتہ یازارس منز تہ عمامہ لاگئت دراو میدان۔یلہ زن تاریخن چھوء لیکوکھمت ؛ اکھ چپنہ کھور اوس بند ژھیونمت ۔یعنی نعلس تان تہ اوس نہ جناب قاسم مس کھور واتان کہین ،یہ اوس حال جناب قاسم سند ۔

وین یمہ ساعتہ وچھو ائس جناب قاسم چھوء کوس ؟

شب عاشورا چھوء تتھ خیمس منز جمع گژھان یتین زن آب چھوء یوان جمع کرنہ یا تتھ خیمس نزدیک ۔ یا تمہ کیس خیمس منز یا تمہ لرء لور یوس زن اجتماع گژھان چھوء اتین چھئی زء پیغام اسہ امام حسین علیہ السلام دوان :

امام حسین علیہ السلام چھوء دپان ؛وچھووی یمن چھوس بہء ضرورت ،توہیہ ساتھی چھنہ یمن کانہہ داد معاملہ ، توہی کریو کامی میانی شُر بچہ تہ تولیوکھ،وتھیو نیریو آرامچ زندگیاہ بہ چھوء سو توہیہ راضی ۔ بہ ونو یہ تہء کہ چھنہ یتھی اصحاب کانسہ نبی یس ، کانسہ ولی خدا یس  نصیب گمئت ۔چھنہ کانسہ نبی یس ، کانسہ ولی یس یتھی گھرک افراد میسر گمئت۔

یہ چھوء امام حسین گوڈء ونان۔

جناب ابوالفضل العباس علیہ السلام ونان ؛ تتھ آرامس ، تتھ زندگی کوس نار دمو یتھی اسہ امام تنہا آسہ ۔ ائس کیاہ دمو رسول خدایس جواب ۔(میانہ زندگی کرنک چھوء اکھ معیار میہ چھوء اکہ دوہ یتہ نیرن ، میہ چھوء سمکھن[آنحضورس،سوء] دوہ یی یہ۔اگر بہء کلمہ گو چھوس ، کلمہ گو آسنوی میون چھوء ونان کہ میہ چھوء رسولخدایس نش جواب دیون ۔ بالغ گژھی تھی  پیٹھہ وونوک میہ یہ کر ،یہ مہ کر ، یہ کر ۔کیازء ؟[کیازہ کہ]میہ چھوء رسولخدا تمہ ساعتہ ونان ؛ اگر میانس اقرارس اقرار کورت تتھ دمے بہء یہ انعام ، بہ ء چھوء سے ضامن خدایس نش ، یتھ زن انکار کورت تتھ چھوء سے نہ بہء ضامن کہین ، خدا کئری اتھ عذابس منزکری  مبتلا ۔ گو اسہ چھوء سورے داد معاملہ رسول رحمت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلمس ساتھی ۔)ابوالفضل العباس ونان ژء[امامس]بغئر کیاہ کرو ، رسول رحمتس کیاہ جوا ب دمو ۔اگر میہ ٹکرء کرن ، پتہ زندء کرن ، پتہ بیہ ٹکرء کرن مگر بہء یژھا امامس بغئر زندء روزن۔یہ چھنہ اسہ قبول کہین۔

یہ ہوے رود اہل بیت تو منز ء، اصحابو منزء اکھ اکھ نفراہ ونان ،ہر کانسہ ہند چھوء کم و بیش یہ ہوے مصداق ونان کہ ائس کتھہ کئن ہیکو پنن امام تنہ تنہا تراوت ،سانہ زندگی ہند کیاہ معیارہیکہ آست یمہ ساعتہ ائس پننہ نس امامس تھر کروپتہ کرو عیش شچ زندگی ۔

گو یہ اوس امتحان ۔امہ پتہ چھوء پتہ چھوء امام حسین علیہ السلام بشارت دوان ۔

کہوٹ چھئي ہمیشہ کیازء کہ قرآن تہء چھوء اسہ ونان < مَنْ جَاءَ بِالْحَسَنَةِ>اسہ یمی ثواب میلن یمین ثوابن چھئی رئچھ کرن،اگر قیامت تان ساتھی تئگ پکناون ساتھی چھئي ۔اگر اسہ ونی عزاداری کئر ثواب میلی، نیبر درای گناہ کئر یمی[ثواب] دئد،موکلئے۔

اگر زن رسول رحمتس[بے ادبی سان] آلو کرنہ ساتھی "محمّد"{صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم}تلہ سا نیبر نیر ۔ خداین دوپ <أَنْ تَحْبَطَ أَعْمَالُكُمْ وَأَنْتُمْ لَا تَشْعُرُونَ>(الحجرات/2)"حبط"گئی تہند تمام اعمال ،کمن صحابی کبارن!یمی زن تمس لرء لور ساتھی چھئي ، ساری عمل گئیو ضایعہ ، ختم گئی ، اتہ رود زیرو،اتہ  چھووی نہ کہین تہندس اکاونٹس منز،بیہ تورو نہ پانس فکرء۔کلام توگکھ نہ ونن کہین۔اسہ خاطرء چھا یہ توی کہ ائس کرو حسین حسین پتہ یوس تہء غلطی تگہء کرن ائس چھئي آزاد تمہ خاطرء ۔< مَنْ جَاءَ بِالْحَسَنَةِ>ائس چھئي حسینی تلہء یلہ اسہ حسینیت تس رائچھ تگہ کرن ۔یہ حسین سند پیغام ، یہ حسین سنز دگ ساتھی تگہء اسہ پکناون محشرس تان،تلہء چھوء اسہ سوء سوری امتیاز میلان یمیوک وعدء چھوء آمت دنہ ۔کیازء اسہ چھوء امام حسین علیہ السلام خدائی بناون ، کہ اگر ائس خدائی بنوو ائس چھئی کامیاب ۔ اگر شک آسہ کامیابی چھنہ ، دپان وچھووی کربلا ہس کن ۔قرآن نس نے تگیو معنی کرن ،مگر وچھوو از گئی 1334 وری تہندین دلن منز چھئي ونہ تہ سوے تازگي ،کیازء یہ "قربة الی الله"چھوء تاثیر دوان۔یوس الہی رنگہ ساتھی رنگہ ناونہء یی سوء چھنہ ضایعہ گژھان کنیہ،سوء چھوء ہمیشہ روزان اور اہل بیت چھئي اسہ یہوے کتھ ہیچھ ناوان ۔

یمہ ساعتہ اما م وین بشارت چھوء دوان ، مرحبا[کران](یعنی کہوٹ تہء لئج،اسہ یہ آزمایش کرنہ ۔ اگر اسہ یہ فکرء ترء کہ ژء کورت یتھہ کئن ژء گژھک جہنمس ،بہء دپہ ہے بہء کوس حسین حسین اوسس کران ۔یہ امتحان لگہ۔شب عاشورا ہیوتن بوڑ امتحان پنہ نین دوستن ۔)امہ پتہ دژن بشارت اکہ اکہ چھوء ونان ژء گژھک شہید،ژء تہ گژھک، ژء کمہ حالہ گژھک ،ژء ساتھی کیاہ گژھہ ۔ کم و بیش سوء منظر تان چھوء بیان کران امام حسین علیہ السلام ۔ یمن درمیان چھوء اکھ نوجواناہ ، امام حسین علیہ السلام یوکن بوتھ چھوء کران سوء چھوء تمن زیٹھین پئتی کن یوان ۔ ادب چھوء برونہ چھنہ یوان ۔بعضی مقتلو چھوء لیکوکھمت کہ جناب قاسم چھوء ٹینڈین پیٹھ تھود وتھان کہ وین پے یس میہ کن نظر۔ یہ چھوء وچھان کہ امام کیازء چھنہ میے یوت ونان ، میہ کیازء چھنہ یہ بشارت میلان ۔ وین یلہ سارنی اطمنان گو کہ سارنے ساتھی کتھ گئي ، وین چھنہ امامس ونن کہین ۔ برونہہ کن چھوء یوان عرض چھوء کران ؛مولا کیاہ میہ گژھہ نا شہادت نصیب کینہ ؟میہ گژھہ نا یہ سعادت نصیب کہ بہ ء کرء پننہ نس امام زمانہ سندس اکس ژہس اکس لحظس زندء زیادء روز نس منز تعاون ۔ کیازکہ یہ چھوء امام زمان سندء وجود ساتھی چھوء خدا ی سند برکا ت زمین پیٹھ نازل گژھان ،یہ ہیکہ سوے [زانتھ]یمس قرآنس پیٹھ ایمان آسہ ۔ یہء چھوء امہ باپت رتہ چھپہ امامس پننہ نس لگن کہ بہء گژھہ نہ وچھن بہء آسہ زندء میانس امام سند حیات مبارک گژھہ گُل۔اللہ اکبر۔

وین چھنہ یہ تہء نہ ، یہ دعواداری تہ  چھنہ کہین ، وین چھوء وچھن اسہ کیاہ چھوء تورمت فکرء ۔اگر یہ پننہ نین یی تین عزیزن یتھہ کئن سوال چھوء کران اسہ کرء نا امام حسین ،اما م زمان کرء نا اسہ ۔

کیازء کہ گوڑء چھوء اسہ عزاداری منز امام زمانی تھوومت طاقچس پیٹھ۔ائس چھئی ونان جنا ب قاسم مس دمو تسلیت ، کمس دمو تسلیت ، کیازء دموت تسلیت ۔سوء چھنا امام حسینس ساتھی یکہ ووٹے۔شہداے کربلا چھہ نا رسول رحمتس ساتھی ۔ائس کیازء چھہ نہ جرئت سان ونان امام زمانن، دوکھہ لد چھوء ونہ کینس زمینس پیٹھ امام زمان ائس چھئی تمہ سندس دوکھس منز یژھان شریک گژھن۔

جناب قاسم یمہ ساعتہ یوتاہ اشتیاق کران چھوء ،یہ ما چھوء بلی مذاق قاہ کہ بہء تہ گژھہ مرن ۔امام چھوء سوال کران ؛کوبریا ژء کیاہ چھئي باسان موت؟

جناب قاسم دپان:" أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ"یہ چھوء ماچھہ کھوتہ تہء میوٹھ باسان ۔ یہ کتھ کیازء چھنہ ائس وژھہ ناوان ۔یہ کیازء چھنہ دپان میہ چھوء خاندر ٹوٹھ۔میہ چھئي مئز لاگن ٹاٹھی ۔ میہ چھوء سہرء گنڈن ٹوٹھ۔بلکہ دپان چھوء میانہ خاطرء چھوء موت "أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ"کیازہ ،پانے یمہ ساعتہ میدان کربلا آکھ ژء وونتھ نا"اَلا تَرَوْنَ اِلَي الْحَقِّ لا يُعْمَلُ بِهِ "توہی چھوو نا وچھا ن حقس چھنہ عملی گژھان کنیہ ۔بہء وچھا بہء آسہ زندءمیہ برونہہ کنہ آسہ میون امام زمان حقچ ترجمانی کران بہء روز زندء تہء بہ ء وچھن سوء مارء گژھان ، امہ کھوتہ چھوء بہتر  أَحْلى مِنَ الْعَسَلِ" ۔مگر خداین وون نا اکھ جماعت چھئي امر بالمعروف خاطرء ، نہی عن منکر خاطرء ، یمے چھئی رستہ گار ،بہء یژھہ امر بالمعروف کرن وول آسن، بہ گژھہ منکرس خلاف اکھ شاہد روزن کہ میہ کور پننہ پان رتہ چھپہء پننہ نس امامس یمی زن حقچ آواز زندء تھاوی ۔یمی ز ن رسول رحمت سند دین مسخ گژھہ نشہ بچووی۔

قاسم بن حسن علیہما السلام سند کربلاہ پیٹھہ پیغام PDF فایل ڈاونلوڈ کرنہ بات

 

©2011 . all rights reserved**